حافظ محمدیحییٰ دہلوی کی قیادت میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند اور اس کی اکائیاں متحد اراکین مجلس عاملہ نے غیر دستوری جمعیت کو ایک ماہ کے اندر تحلیل کرنے کی مہلت دی


دہلی: ۷۱/اکتوبر ۲۱۰۲ء
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے اخبار کے نام جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ آج مورخہ ۷۱/اکتوبر۲۱۰۲ء بروز بدھ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس عاملہ کا ایک اہم اجلاس زیر صدارت جناب حافظ محمد یحییٰ دہلوی ،ا میر مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند بمقام اہل حدیث کمپلیکس اوکھلا ، نئی دہلی منعقد ہوا جس میں ملک کے تمام صوبوں سے موقر اراکین عاملہ و ذمہ داران صوبائی جمعیات اہل حدیث شریک ہوئے ۔ ان موقر اراکین عاملہ و صوبائی جمعیات کے ذمہ داران نے بیک زبان مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیر جناب حافظ محمد یحییٰ دہلوی اور ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی کی قیادت میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند سے اپنی والہانہ وابستگی کا اظہار کیا اور کہا کہ ہم موجودہ ذمہ داران کی قیادت میں ملکی سطح پر متحد و منظم ہیں۔
موقر اراکین نے کہا کہ مرکزی جمعیت کے اندر کسی طرح کی بیجا مداخلت یا جمعیت و جماعت کے اندر انتشار و فساد پھیلانے کی کسی طرح کی بھی کوشش نا قابل برداشت ہے ۔ نیز موقر ہائوس نے جمعیت مخالف سرگرمیوں میں ملوث لوگوں کے خلاف سخت نوٹس لیتے ہوئے ان کو موقع دیا کہ وہ ایک مہینہ کے اندر اپنی غیر دستوری جمعیت کو تحلیل کردیں اس کے بعد ہی کسی طرح کی بھی گفتگو دستورکی روشنی میں ممکن ہوسکے گی۔


مختلف صوبوں سے آئے ہوئے موقر اراکین عاملہ و ذمہ داران صوبائی جمعیات نے اجلاس میں کہا کہ مورخہ ۶/اکتوبر ۲۱۰۲ء کوبعض لوگوں کے ذریعہ ایک خود ساختہ جمعیت کا اعلان جماعت اہل حدیث کو کمزور کرنے کی ایک سوچی سمجھی ترکیب اور جمعیت کے اصولوں سے انحراف ہے جمعیت و جماعت کے خلاف اس طرح کی کسی بھی سرگرمی و سازش کو کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کیاجا سکتا۔ مرکزی جمعیت اہل ہند ایک دستوری ، چنندہ اور رجسٹرڈ جمعیت ہے جسے ملک کے تمام صوبوں کے موقر نمائندوں نے دستور کی مکمل پاسداری کے ساتھ منتخب کیا ہے اور الحمد للہ آج بھی جمعیت کو اس کی مکمل تائید و حمایت حاصل ہی۔ لہذا آج کی مجلس نام نہاد تنظیم جمعیت اہل حدیث ہند کو کنڈم کرتی ہی۔
اس کے ساتھ ہی موقر ہائوس میں آسام کے فساد زدگان کی ریلیف کے حوالے سے ہوئی اب تک کی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا اور آئندہ کے لیے لائحہ عمل تیار کیا گیا۔ اور طے پایا کہ فساد زدگان کی باز آبادکاری کے لیے ایک اعلیٰ سطحی وفد آسام کا پھر دورہ کرے گا اور ان کے لیے مکانات کی تعمیر کرے گا۔
پریس ریلیز کے مطابق اس اہم میٹنگ میں جن موقر اراکین نے عاملہ و ذمہ داران صوبائی جمعیات نے شرکت کی ان میں مولانا طہ سعید خالد مدنی ،امیر صوبائی جمعیت اہلحدیث اڑیسہ، جناب محمد شعیب انصاری ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث اڑیسہ، مولانا مقصود الرحمن مدنی، امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث آسام، مولانا صفی احمد مدنی، امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث آندھراپردیش، حافظ محمد عبد القیوم ، ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث آندھراپردیش، ڈاکٹر سید عبدالحلیم ، امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث بہار ، مولانا محمد علی مدنی، ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث بہار، مولانا غلام رسول ملک، امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث جموں و کشمیر ، جناب عبدالرحمان بٹ، ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث جموں و کشمیر ، مولانا عبدالرشید شائقی ، امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث جھارکھنڈ، مولانا شمس الحق سلفی، نائب ناظم صوبائی جمعیت اہلحدیث جھارکھنڈ، جناب محمد مشتاق صدیقی نائب امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث پنجاب، ڈاکٹر عبدالدیان انصاری ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث پنجاب، مولانا عبدالستار سلفی، نائب امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث دہلی، مولانا عبدالکریم سلفی، ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث دہلی، جناب عبدالرحمن خلجی امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث راجستھان ، جناب عبدالحفیظ ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث راجستھان، جناب محمد اسلم خان ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث کرناٹک و گوا، حافظ محمود سلفی امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث گجرات، مولانا محمد شعیب میمن جوناگڑھی ناظم صوبائی جمعیت اہلحدیث گجرات، مولانا عبدالقدوس عمری امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث مدھیہ پردیش ، جناب عبد الصمد سوز ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث مدھیہ پردیش،  مولانا محمد ہارون سنابلی ، ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث مغربی یوپی ، مولانا شہاب الدین امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث مشرقی یوپی، مولانا عبدالقادر انور بستوی ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث مشرقی یوپی،  مولانا حافظ عین الباری عالیاوی ،امیرصوبائی جمعیت اہل حدیث مغربی بنگال،  مولانا سجاد حسین ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث مغربی بنگال ، الحاج وکیل پرویز صوبائی جمعیت اہل حدیث مہاراشٹر ،  مولانا عبدالسلام سلفی امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث ممبئی، مولانا اثیر الدین سلفی ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث ہریانہ، مولانا نواب احمد سلفی ہریانہ وغیرہ قابل ذکر ہیں۔
اجلا س کے اخیر میں ملک و ملت و انسانیت کے مسائل کے سلسلہ میں درج ذیل قرارداد پاس ہوئی:
۱۔ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس عاملہ کایہ اجلاس محسوس کرتاہے کہ نوع بنوع مشکلات سے گھری ہوئی انسانیت کے مسائل کاواحدحل اسلامی تعلیمات کے مطابق زندگی گذارناہی۔ لہٰذایہ اجلاس مسلمانوں سے عموما اوراحباب جماعت سے خصوصا اپیل کرتاہے کہ وہ اسلام کی خالص تعلیمات پرخود بھی عمل پیراہوںاوربرادران وطن کو بھی ان سے روشناس کرائیں۔
۲۔ مجلس عاملہ کایہ اجلاس بابری مسجدقضیہ سے متعلق جملہ مقدمات کی سست روی پراپنے اضطراب وبے چینی کا اظہار کرتاہے اورحکومت سے اپیل کرتاہے کہ وہ اس کے جلد فیصل ہونے کے لئے مناسب تدابیراختیار کرے اور اس کے تیزرو ہونے میں جوبھی رکاوٹیں ہوں ان کو دور کری۔
<۳۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس ۱۱مسلم نوجوانوںکو بری کئے جانے سے متعلق سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلہ کومایوسی کے شکار مسلمانوں کے لئے امیدافزا قدم تصورکرتاہے اور عدلیہ کی تعریف کرتے ہوئے اس فیصلہ کا والہانہ خیرمقدم کرتاہے نیز حکومت سے اپیل کرتاہے کہ وہ حفاظتی ایجنسیوں کے ذریعہ مسلمانوں کی اندھادھند گرفتاری کے اسباب کا تجزیہ اوراس کی پیش بندی کے لئے ٹھوس اورسنجیدہ اقدامات کری، دہشت گردی کے الزام میں جیل کے اندرقید نوجوانوں کے لئے فاسٹ ٹریک عدالتیں قائم کرے ،جرم ثابت نہ ہونے کی صورت میں مناسب معاوضہ کااہتمام کرے اورخاطی پولیس افسران کو سزادی جائی۔
۴۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس  بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کرتاہے کیونکہ بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹرپورے ملک کے مسلمانوں اور انصاف پسند سیکولر باشندگان وطن کے لئے ابھی تک بے چینی کا باعث بناہواہے اس لئے پولیس کے مورال گرجانے کا حیلہ نہ کرے اور دوسرے انکاؤنٹروں کی طرح اس کی بھی تحقیقات کرائے ۔
۵۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس ملک میں کمرتوڑمہنگائی اورآئے دن اس میں اضافے پر گہری تشویش کا اظہار کرتا ہے اور حکومت سے اپیل کرتا ہے کہ وہ اس پر قابو پانے کے لئے مناسب اورٹھوس تدابیر اختیار کرے کیونکہ بصورت دیگر غریبی میں اضافہ ہوگا اور اس کی کوکھ سے مختلف قسم کے جرائم جنم لیں گے اور صورتحال مزیدابترہوجائیگی۔
۶۔  مجلس عاملہ کا یہ اجلاس سماج میں پھیلی ہوئی مختلف قسم کی برائیوں پر تشویش کااظہارکرتا ہے اور محسوس کرتا ہے کہ ان برائیوں کے خاتمہ کے ذریعہ ایک صالح معاشرے کا قیام عمل میں آنا چاہئی۔مجلس عاملہ کا یہ احساس ہے کہ ملک کی اکثریت حق پسند واقع ہوئی ہے حالات کے پیش نظر اسلامی تعلیمات کو ان کے سامنے پیش کیاجائی۔ اوریہ اسی صورت میں ممکن ہے جب ملی ودینی تنظیمیں اور جماعتیں اصلاح معاشرہ کی مہم شروع کریں اوررسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات اور اسوہ کی روشنی میں سماجی برائیوں کو دور کرنے کی کوشش کریں۔
N۷۔   مجلس عاملہ کا یہ اجلاس برادران وطن سے عموما اور مسلمانوں سے خصوصااپیل کرتاہے کہ وہ معاشرے کو جوا،شراب ، دیگر منشیات، جنسی بے راہ روی، لوٹ مار، چور بازار ی،دھوکہ دہی اور ہرطرح کی قبیح حرکات سے پاک وصاف کریں۔اور نوجوانوں میں پائی جانے وا لی اخلاقی برائیوں کو دور کرنے کی سنجیدہ اورمخلصانہ کوشش کریں کیونکہ وہ قوم کا قیمتی سرمایہ اور اس کا مستقبل ہیں، ان کی نگہداشت اوربہتر رہنمائی صحتمند معاشرہ کے لئے انتہائی ضروری ہی۔ یہ اجلاس دینی جماعتوں سے بھی اپیل کرتا ہے کہ نوجوانوں کے اندر اسلام کی صحیح تعلیمات و اخلاق حسنہ کو پروان چڑھا نے کی کوشش کریں۔
۸۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس قتیل صدیقی کے قتل کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے یہ اپیل بھی کرتاہے کہ  اس کے اہل خانہ کو جیل میں قتل ہونے کی وجہ سے ایک کروڑ کا مالی معاوضہ دیاجائی۔
۹۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس گوپال گڈھ، پرتاپ گڈھ اور کوسی کلاں میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات کی مذمت کرتے ہوئے اسے انتظامیہ کی لاپرواہی پر محمول قرار دیتا ہے  اور ان فسادات میں جن کا جانی ومالی نقصان ہواہے ان کو پچاس پچاس ہزار روپے کے معاوضہ کا مطالبہ کرتاہے ۔
۰۱۔  عام خیال ہے کہ’’انڈین مجاہدین‘‘ جس کا نام بتاکر اے ٹی ایس کے افسران،مسلم نوجوانوں کو گرفتار کررہے ہیں یہ پولیس کی دماغی اختراع ہے زمینی سطح پر اس کا کوئی وجود نہیں ہے ۔لہٰذا مجلس عاملہ کا یہ اجلاس حکومت سے مطالبہ کرتاہے کہ پہلے اس کے وجود کے لئے عدالتی تحقیقات کرائی جائے کیوں کہ ملک کے انصاف پسند جاننا چاہتے ہیں کہ اس طرح کی کوئی تخریبی تنظیم، حقیقت میں موجو د ہے یا یہ محض فرضی تنظیم ہی۔
۱۱۔ ممتاز ترین صحافی اورسابق سفیرجناب کلدیپ نیرنے اپنی کتاب میں یہ انکشاف کیاہے کہ بابری مسجد انہدام کے وقت اس وقت کے وزیراعظم نرسمہاراؤ انہدامی کارروائی سے واقف تھے ایسے میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس عاملہ کا یہ اجلاس کانگریس سے مطالبہ کرتاہے کہ وہ انہدام کی ذمہ داری قبول کرے اور اس کے لئے مسلمانوں سے معافی مانگی۔
۲۱۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس حکومت ہند سے اپیل کرتاہے کہ وہ ’’انسدادفرقہ وارانہ فساد بل‘‘ کو جلد ازجلد پاس کرے اورمقامی انتظامیہ کو جواب دہ بنائے تاکہ فسادات کے موقع پر اقلیتیں محفوظ رہیں۔ راجستھان اور یوپی کے اندر حال ہی میں ہونے والے فسادات نے اس جیسے بل کی اہمیت کو مزید بڑھادیاہی۔
۳۱۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس حکومت سے اپیل کرتاہے کہ گرفتار مسلم نوجوانوں سے تفتیش کے دوران تفتیشی ٹیم میں سپریم کورٹ کے ریٹائرڈ ججوں کے ساتھ ہی ساتھ ہر فرقہ کے نمائندوں کو بھی شامل کیاجائی۔
۴۱۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس حکومت سے مطالبہ کرتاہے کہ وہ آسام میں سلسلہ وار فسادات کامستقل اور پائیدار حل نکالتے ہوئے فسادزدگان کی بازآبادکاری کو یقینی بنائے اور ان کے لئے معقول معاوضہ کا اہتمام کری۔
۵۱۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس بدنام زمانہ دستاویزی فلم ’’ا نوسنس آف مسلم‘‘کی سخت مذمت کرتے ہوئے اسے امت مسلمہ کی دل آزاری کی منصوبہ بند سازش قرار دیتاہی۔ اجلاس کا احساس ہے کہ یہ فلم نہ صرف شرانگیزہے بلکہ یہ اقوام متحدہ کے چارٹر کے بھی خلاف ہے جس میں کہا گیا ہے کہ دوسرے مذاہب کا احترام سبھی اقوام عالم کی ذمہ داری ہے نیز جولوگ اس طرح کی نازیباحرکات کا ارتکاب کرتے ہیں وہ خودہی اپنے انجام کو پہنچیں گے اور عظمت رسول پرکوئی آنچ نہیں آئے گی۔
۶۱۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس ملک کے طول وعرض بالخصوص ہریانہ سے عصمت دری کے واقعات کی جس طرح بڑی تعداد میںخبریں آرہی ہیں ان پر اپنی تشویش کا اظہار کرتاہے اور اسے ملک کے لئے انتہائی خطرناک رجحان تصور کرتے ہوئے اس کی پیش بندی کے لئے حکومت سے فوری اور مناسب اقدامات کی اپیل کرتاہی۔
۷۱۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس حکومت کے اس اعلان کا خیرمقدم کرتاہے جس میں کہاگیاہے کہ پولیس اورنیم فوجی دستوں میں مسلم نمائندگی کو یقینی بنایاجائے گا۔
۸۱۔ مجلس عاملہ کے اجلاس کا احساس ہے کہ اسرائیل کی جارحیت نقطہ عروج کو پہنچ چکی ہے اور اسلامی مقدسات کے خلاف اس کی سازشوں کا دائرہ وسیع سے وسیع تر ہوتاجارہاہے نیزاس کی ساری گھنائونی کوششیں اس پرمرکوزہو گئی ہیں کہ وہ قبلہ اول کو ودیگرجملہ مقدس مقامات کوغصب کرلے اور فلسطینیوںکا عرصہ حیات تنگ کردی۔ لہٰذایہ اجلاس اسرائیل کی ان گھناؤنی سازشوں کی بھر پور مذمت کرتا ہے اور حق کے خلاف اس کاساتھ دینے والوں کے رویے پر اظہارتشویش اور فلسطینی کاز سے ہمدردی رکھنے والوں کی ستائش کرتا ہی۔
۹۱۔ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس عاملہ کا یہ اجلاس عراق وافغانستان میںمسلسل ہورہے جانی ومالی نقصانات پراپنی تشویش کا اظہار کرتاہے اوراقوام عالم سے اپیل کرتا ہے کہ وہاں کے اقتدار اعلیٰ کو فوری طورپروہاں کے عوام کے حوالے کئے جانے کا راستہ ہموار کریںتبھی وہاں امن وامان قائم ہوسکتا ہی۔
۰۲۔  مجلس عاملہ کا یہ اجلاس طویل عرصہ سے شام کی حکومت کے ذریعہ عوام کے خلاف جاری ظلم وبربریت کوانتہائی تشویش کی نگاہ سے دیکھتا ہے نیز اسے پورے خطہ کے لئے انتہائی نقصان دہ تصور کرتاہے اورمطالبہ کرتا ہے کہ خون خرابے کو فورابندکیا جائے اور عوام کی مرضی کے مطابق اقتدار کی منتقلی کا راستہ ہموار ہونے دیا جائی۔ نیز اقوام عالم سے اپیل کرتاہے کہ وہاں کے امن پسندباشندوں پرہورہی کھلم کھلا جارحیت اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے پیش نظر انسانیت نوازی کا ثبوت دیتے ہوئے ذاتی مفادات سے اوپر اٹھ کرسنجیدہ اقدامات کریں ۔
۱۲ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس جمعیت مخالف سرگرمیوں کو تشویش کی نگاہ سے دیکھتا ہے اور صوبائی جمعیتوں کوغیر دستوری طور پر تشکیل پائی جانے والی جمعیات باور کئے جانے اور مرکزی جمعیت کے صاف شفاف اور پر وقار دستوری انتخاب کے خلاف پرو پیگنڈہ کرنے والوں کی تردید کرتا ہی۔ نیز یہ اجلاس جمعیت کو تقسیم کرنے کی کوشش کرنے والوں اور نام نہاد تنظیم جمعیت اہل حدیث کو کنڈم کرتا ہی۔ اور ان لوگوں کو تنبیہ کرتا ہے کہ وہ اپنے غیر شرعی و غیر اخلاقی رویے سے باز آئیں۔
۲۲ مجلس عاملہ کے اس اجلاس کا احساس ہے کہ جمعیت کے اندر کسی طرح کی بیجا مداخلت انتہائی خطرناک اور جماعتی کاز کے لیے بہت ہی نقصان دہ ہی۔ لہذا کسی بھی داخلی یا خارجی مداخلت کو ہرگز نہیں برداشت کیا جاسکتا ۔ عاملہ و شوریٰ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی دو موقر اور بااختیار مجالس ہیں اور وہی جمعیت و جماعت کے حوالے سے کسی بھی فیصلے کی مجاز ہیں۔ 
$۳۲۔ مجلس عاملہ کا یہ اجلاس جامعہ اسلامیہ بھوارہ،مدھوبنی کے استاذ مولانا مطیع الرحمن مدنی اور سابق رکن شوریٰ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند اور رکن شوریٰ صوبائی جمعیت اہل حدیث مدھیہ پردیش الحاج عبدالرازق صاحب اور نائب امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث مدھیہ پردیش مولانا عبدالوہاب سلفی کی اہلیہ وغیرہ کے انتقال پر اپنے رنج وغم کا اظہار کرتا ہے اور ان کے پسماندگان سے اظہار تعزیت کرتاہے اور اللہ تعالیٰ سے دعا گو ہے کہ وہ ان کی حسنات کوشرف قبولیت بخشی، لغزشوں سے درگذرفرمائے اورجنت الفردوس میں جگہ دے نیزپسماندگان کو صبر جمیل کی توفیق بخشی۔آمین
جاری کردہ
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند

The Collective Fatwa against Daish and those of its ilk

ہمارے رسائل وجرائد

http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/al-isteqamah2gk-is-214.jpglink
http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/islahe-samaj2gk-is-214.jpglink
http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/jareeda-tarjumah2gk-is-214.jpglink
http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/the-symple-truth2gk-is-214.jpglink
«
»
Loading…