مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس عاملہ کی میٹنگ کا انعقاد

Amla Photo

۳۳ویں آل انڈیا اہل حدیث کانفرنس کو کا میاب تر بنانے کاعزم اور جوش و خروش
اہم ملی،ملکی اورجماعتی مسائل پر غوروخوض
نئی دہلی:۷۱/جنوری۶۱۰۲ء
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی پریس ریلیز کے مطابق آج اہل حدیث کمپلیکس،اوکھلا،نئی دہلی میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس عاملہ کی ایک اہم میٹنگ امیرجمعیت محترم حافظ محمدیحيٰ دہلوی حفظہ اللہ کی صدارت میں منعقد ہوئی جس میں ملک کے تمام صوبوں سے تشریف لائے موقر اراکین عاملہ اور صوبائی جمعیات کے ذمہ داران نے شرکت کی۔مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے جملہ شعبہ جات کی ہمہ جہت دینی، دعوتی، تعلیمی، اشاعتی، علمی، تحقیقی، رفاہی وانسانی خدمات اور سرگرمیوں کی رپورٹ پیش کی اور ناظم مالیات جناب الحاج وکیل پرویز صاحب نے آمد و صرف کا تفصیلی حساب کتاب پیش کیا جن پر موقر مجلس عاملہ نے اطمینان و خوشی کا اظہارفرمایا۔میٹنگ میں جمعیت کی سرگرمیوں کا جائزہ لیا گیااور آئندہ دعوتی،تعلیمی، تنظیمی اوررفاہی منصوبوں کے بارے میں غوروخوض کیا گیا اور داعش وغیرہ کی دہشت گردانہ کارروائیوں کی کڑی مذمت کی گئی اور دہشت گردی کو وطن عزیز کے لیے خصوصاً اور پوری انسانیت کے لیے عموما عظیم خطرہ اور ناسور قرار دیا گیا۔


میٹنگ میں بطور خاص مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے زیر اہتمام ۲۱-۳۱/مارچ ۶۱۰۲ء کو دہلی کے رام لیلا میدان میں منعقد ہونے والی ۳۳ویں آل انڈیا اہل حدیث کانفرنس کی تیاریوں کا جائزہ لیاگیا اور آئندہ کے لیے لائحہ عمل ترتیب دیا گیا۔ پریس ریلیز کے مطابق شرکاء اجلاس نے کانفرنس کے تئیں کافی جو ش و خروش کا مظاہرہ کیا اور اسے ہر طرح سے کامیاب بنانے کا عزم کیا۔
پریس ریلیز کے مطابق جماعتی امور،ملکی،عالمی اور ملی مسائل پرتبادلہ خیال کیا گیا اورملک وملت اورعالمی مسائل سے متعلق قرار داد اور تجاویز پیش کی گئیں۔مجلس عاملہ کی قرارداد میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے اقلیتی کردار کی بحالی سے متعلق درخواست کو واپس لئے جانے کوافسوسناک اور اس کواقلیت مخالف قرار دیا گیا ہے علاوہ ازیں جامعہ ملیہ اسلامیہ کے اقلیتی کردار کے چھیڑ چھاڑسے گریز کرنے اوراس کے اقلیتی کردار کوباقی رکھنے کی اپیل کی گئی ہے۔ قرارداد میں ۳۳ویں آل انڈیا اہل حدیث کانفرنس کو موجودہ ملکی اور عالمی تناظر میں اہم اور ضرور ی قرار دیا گیا۔ علاوہ ازیں ملی تنظیموں اور ادارو ں کو اتحاد واتفاق کی فضا بنائے رکھنے اور انتشار وافتراق سے دوررہنے کی ضرورت پر زوردیا گیا۔ اسی طرح سے پٹھان کوٹ ایربیس پر حملہ کی شدید مذمت اور بے قصور نوجوانوں کو ضمانت پر رہا کرنے اوران کو مناسب معاوضہ دینے اور تخریبی واقعات کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا ہے۔علاوہ ازیں بیف کے نام پر وطن عزیز کی پرامن فضا کو مکدر کرنے والوں کے خلاف کارروائی کاپرزور مطالبہ کیا گیا ہے۔
مجلس عاملہ نے ایران میں سعودی سفارت خانہ پر حملہ کی پرزور مذمت کی اور سعودی حکومت کی طرف سے دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کوحق بجانب قرار دیا اور مسئلہ فلسطین کے حل کے سلسلے میں سنجیدہ اقدامات کے لئے عالمی برادری سے اپیل کی اورپیرس کے دہشت گردانہ واقعہ کی مذمت کی گئی اورچنئی سیلاب متاثرین سے اظہارہمدردی کیاگیاہے۔ عاملہ نے اہم شخصیات کے انتقال کو جماعت وملت کا بڑا خسارہ قرار دیاہے۔

The Collective Fatwa against Daish and those of its ilk

ہمارے رسائل وجرائد

http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/al-isteqamah2gk-is-214.jpglink
http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/islahe-samaj2gk-is-214.jpglink
http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/jareeda-tarjumah2gk-is-214.jpglink
http://www.ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/the-symple-truth2gk-is-214.jpglink
«
»
Loading…